ہفتہ , جنوری 18 2020
تازہ ترین
Home / اہم خبریں / حکومت سندھ، اور سندھ پولیس کی کاوشوں سے ہم مقتول کے ورثاء کے سا منے سرخرو ہوئے ہیں صوبائی وزیر داخلہ سندھ سہیل انور سیال

حکومت سندھ، اور سندھ پولیس کی کاوشوں سے ہم مقتول کے ورثاء کے سا منے سرخرو ہوئے ہیں صوبائی وزیر داخلہ سندھ سہیل انور سیال

حکومت سندھ، اور سندھ پولیس کی کاوشوں سے ہم مقتول کے ورثاء کے سا منے سرخرو ہوئے ہیں کیونکہ قاتلوں کو گرفتار کیا گیا ہے جس سے سندھ پولیس کا مقام بلند ہوا ہے،مٹھی میں قتل ہونے والے دو تاجر بھائیوں کے ورثا کے پاس پہنچے جہاں انھوں نے ان کے ورثا کوبتایا کہ مقتولین کے قتل میں ملوث اصل ملزمان گرفتار کر لئے گئے ہیں۔صوبائی وزیر داخلہ سندھ سہیل انور سیال
مٹھی( نمائندہ نیوزنائن – روزنامہ الاسواق شہزاد خان صابری) صوبائی وزیر داخلہ سندھ سہیل انور سیال اور آئی جی سندھ،پولیس اے ڈی خواجہ اورڈی آئی جی مظہر نواز شیخ ، مقامی منتخب نمائندوں جس میں ایم این اے فقیر شیر محمد بلالانی، ایم پی اے ڈاکٹر مہئش کمار ملانی، ڈپٹی کمشنر تھرپارکر ڈاکٹر حفیظ احمد سیال ، ایس ایس پی تھرپارکر امیر سعود مگسی، ایس ایس پی میرپورخاص نظیر احمد میربحر کے ہمراہ مٹھی میں قتل ہونے والے دو تاجر بھائیوں کے ورثا کے پاس پہنچے جہاں انھوں نے ان کے ورثا کوبتایا کہ مقتولین کے قتل میں ملوث اصل ملزمان گرفتار کئے گئے ہیں ، انھوں نے کہا کہ کافی محنت کے بعد اصل قاتل گرفتار کئے ہیں یہ ہم نے کسی پر احسا ن نہیں کیا یہ ہمارہ فرض ہے جس پر مقتولین کے ورثا نے سندھ حکومت، صوبائی وزیر، آئی جی سندھ پولیس اور تھرپارکر پولیس کی کارکردگی کو سراہا، بعدازاں صوبائی وزیر سہیل انور سیال نے ایس ایس پی آفس تھرپارکر میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا آج حکومت سندھ، اور سندھ پولیس کی کاوشوں سے ہم مقتول کے ورثاء کے سا منے سرخرو ہوئے ہیں کیونکہ قاتلوں کو گرفتار کیا گیا ہے جس سے سندھ پولیس کا مقام بلند ہوا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مٹھی جیسے پر امن شہر میں اس واقعے کی پی پی پی کی اعلیٰ قیادت اور سندھ حکومت نے نوٹس لیتے ہوئے قاتلوں کو جلد گرفتار کرنے کا ٹارگیٹ دیا اور مٹھی کا یہ واقعہ سندھ حکومت اور سندھ پولیس کیلئے ایک بڑا چئلینج تھا اس میں تھوڑا وقت ضرور لگا مگر آج ہم نے کامیابی حاصل کی ہے ۔ صوبائی وزیر داخلہ سہیل انور سیال نے کہا کہ سندھ پولیس امن و امان کی صورتحال برقرار رکھنے اور دہشتگردی کے خاتمے کیلئے دیگر صوبوں کی پولیس کے مقابلے میں تمام بہتر کردار رہا ہے ۔ انہوں نے مقتول کے ورثا کو یقین دلایا کہ سندھ حکومت ان کی ہر ممکن مدد فراہم کریگی ۔ انہوں نے سپریم کورٹ آف پاکستان اور سندھ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس سے گذارش کرتے ہوئے کہا کہ اب وہ اس کیس میں دلچسپی لے کر اس کیس کی سماعت کریں تاکہ قاتلوں کو سخت سزا دے جائے اور ورثاء کو انصاف مل سکے ۔ اس موقع آئی جی سندھ پولیس اے ڈی خواجہ نے میرپورخاص پولیس کی جانب سے قاتل گرفتار کرنے پر 10لاکھ روپے انعام ڈی آئی جی پولیس میرپورخاص رینج مظہر نواز شیخ کے حوالے کرتے ہوئے کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایک دکھ بھرا واقعہ تھا ورثاء کو تسلی دینے کیلئے 50دن لگ گئے اصل قاتل گرفتار کرنے پر میرپورخاص پولیس کو شاباش دیتا ہوں اس کیس کی مزید تفتیش کیلئے ایس ایس پی تھرپارکر کی سربراہی میں ایک ٹیم تشکیل دی گئی ہے جس کے بعد کیس کو دہشتگردی کورٹ میں چالان کیا جائے گا۔ اس موقع پر ڈی آئی جی پولیس میرپورخاص رینج نے تفصیلی آگاہی دیتے ہوئے کہا کہ سندھ حکومت اور میرپورخاص پولیس پر اقلیتی برادری کے سبب اس کیس کا دباء تھا ۔ مٹھی میں یہ واقعہ ٹارگیٹ کلنگ، ذاتی جھگڑے ، ہندو مسلمان فساد پھلانے کی نوعیت کا نہیں تھا بلکہ یہ واقعہ صرف پیسے چھیننے کی نوعیت کا تھا ۔ اس کیس کی مختلف پہلووں سے چھان بین کے بعد آخر کار 50دن کے بعد 3ملزمان جس میں نذر مکرانی جس کا تعلق میرپورخاص، بہرام لاشاری، اور ایک سہولت کار اللہ ورایو عمرانی گاؤں نینی سر جس کا تعلق مٹھی سے ہے کو گرفتار کیا گیا جنہوں ن ے اپنے جرم کا اعتراف بھی کیا ۔ انہوں نے صوبائی وزیر داخلہ سندھ اور آئی جی سندھ پولیس سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ مستقبل میں تھرپارکر ضلع اہم زون میں شامل ہو جائے گا اس لئے اقلیتی برادری سے ہونے والے ایسے واقعے کی روکتھام کیلئے اہم جگہوں پر سی سی ٹی وی کئمیرا اور پولیس تیکنیل اسٹاف کو تربیت دینے کہ ضرورت ہے ۔ اس موقع پر مقتول بھائیوں کے والد پتامبر نے صوبائی وزیر داخلہ اور آئی جی سندھ پولیس سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ہماری باقیات کو خطرہ ہے اس لئے ہمیں سیکورٹی فراہم کی جائے جس پر صوبائی وزیر داخلہ نے ایس ایس پی تھرپارکر کو ہدایت کی کہ مقتول کے والد اور ان کے خاندان کو سیکیورٹی دی جائے ۔

About نیوز 9

Check Also

وفاقی وزیر مراد سعید نے ایک اور کامیابی اپنے نام کر لی

وزارت پوسٹل کے بعد وزارت مواصلات میں بھی اربوں روپے کی آمدن، وزارت مواصلات کا …

جواب دیں